چاند کے بعد بھارت پہلا خلائی مشن سورج کی جانب بھیجنے کے لیے تیار

چندریان 3 کے چاند پر اترنے کے بعد انڈین اسپیس ریسرچ آرگنائزیشن (اسرو) نے سورج پر مشن بھیجنے کا اعلان کیا ہے۔

اسرو کی جانب سے آدتیہ ایل 1 نامی مشن 2 ستمبر کو سورج کی جانب بھیجا جائے گا۔

یہ مشن 2 ستمبر کی صبح ریاست آندھرا پردیش کے ستیش دھون اسپیس سینٹر سے روانہ کیا جائے گا۔

آدتیہ ایل 1 مشن کا مقصد سورج کے بالائی ماحول کی تحقیق کرنا ہے جبکہ ہمارے نظام شمسی کے ستارے کے دیگر پہلوؤں کی جانچ پڑتال بھی کی جائے گی۔

چندریان 3 کے روور کی چاند کی سطح پر اترنے کی پہلی ویڈیو جاری

یہ سورج کی جانب بھیجے جانے والا پہلا بھارتی مشن ہوگا اور اسرو کے مطابق اس سے سورج کے بارے میں جاننے میں کافی مدد ملے گی۔

اس سے قبل سورج کی جانب ناسا اور یورپین اسپیس ایجنسی نے مشنز بھیجے ہیں۔

اسرو کے مطابق ابھی کوئی اور مشن سورج کے بالائی ماحول کے درجہ حرارت کا قریب سے جاکر مشاہدہ کرنے کی صلاحیت نہیں رکھتا، مگر ہمارا مشن ایسا کرسکے گا۔

یہ مشن خلائی کھوج کے حوالے سے بھارتی طاقت کا اظہار بھی ہوگا کیونکہ سورج زمین کے موسم پر اثر انداز ہوتا ہے۔

خیال رہے کہ چندریان 3 مشن 23 اگست کو کامیابی سے چاند کے قطب جنوبی میں اتر گیا تھا۔

چندریان 3 مشن 14 جولائی کو روانہ ہوا تھا جو لانچ کے بعد 10 دن تک زمین کے مدار میں موجود رہا اور 5 اگست کو کامیابی سے چاند کے مدار میں داخل ہوا۔

وکرم نامی لینڈر 17 اگست کو پروپلشن موڈیول سے کامیابی سے الگ ہوا تھا جس کے بعد23 اگست کو وہ چاند پر اترا۔

مشن کی کامیابی کے بعد بھارت چاند پر سافٹ لینڈنگ کرنے والا دنیا کا چوتھا ملک جب کہ چاند کے قطب جنوبی پر پہنچنے والا پہلا ملک بن گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں